news

ارسا نے مشاورتی کمیٹی کے اجلاس کے منٹس آف میٹنگ میں حقائق کی غلط تشریح اور تبدیلی کی ہے، جام خان شورو

کراچی: صوبائی وزیر برائے محکمہ آبپاشی جام خان شورو نے کہا ہے کہ ارسا نے حالیہ 30 ستمبر کو منعقد کیے جانے والے مشاورتی کمیٹی کے اجلاس کے جاری کردہ منٹس آف میٹنگ میں حقائق کی غلط تشریح کرکے ان میں تبدیلی کی گئی ہے۔ ہم ارسا کے اس عمل کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا ک صوبہ سندھ کسی بھی صورت میں تھری ٹیئر فارمولے کو قبول نہیں کریگا اس کی کوئی بھی قانونی حیثیت نہیں ہے۔

ان باتوں کا اظہار آج انہوں نے اپنے ایک جاری کردہ ویڈیو بیان میں کیا ہے۔

صوبائی وزیر آبپاشی جام خان شورو نے بیان میں کہا کہ ارسا کی جانب سے 2003ع میں جب تھری ٹیئر فارمولے کی منظوری چاہی تب بھی ارسا کے مشاورتی کمیٹی کے اجلاس پر جاری منٹس آف میٹنگ میں تبدیلی کردی گئی تھی جس پر سندھ حکومت نے انہیں 5 مئی 2003 کو ایک خط کے ذریعے ظاہر کیا تھا اور اسی طرح ارسا نے 1994ع میں بھی منٹس آف میٹنگ میں حقائق کی غلط تشریح اور فارجری کی تھی جسکو اس وقت کی حکومت نے 12مئی 1994ع کو بھی ایک خط لکھ کر ظاہر کردیا تھا۔

انہوں نے مزید کہا کہ اس مرتبہ بھی ارسا نے اپنی جھوٹ اور دوکھے کی روایت کو برقرار رکھتے ہوئے اجلاس کے منٹس میں حقائق کی غلط تشریح کی ہے جس پر تشویش ہے اور اسکی مذمت کرتے ہیں۔  ارسا کے اس طرح کے عمل سے تباہ کن اثرات مرتب ہوگئیں۔

صوبائی وزیر جام خان شورو نے مطالبہ کیا ہے کہ ارسا کے آئندہ منقعد ہونے والے تمام اجلاسوں کی ویڈیو اور آڈیو ریکارڈنگ کی جائے تاکہ حقائق کو غلط پیش کرنے کے عمل کو ظاہر کیا جاسکے۔