news-details
کراچی

وزیر اعظم کا منصب سنبھالنے کے بعد شہباز شریف کی کراچی آمد، مراد علی شاہ کی ون آن ون ملاقات

کراچی:(بدهه 13 اپريل 2022ع) وزیراعظم شہباز شریف نے مزار قائد پر حاضری دی اور فاتحہ خوانی کی۔ شہباز شریف نے بابائے قوم کے مزار پر پھول بھی رکھے۔ ملکی ترقی کے لئے دعا کی گئی۔ وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے وزیراعظم سے ون آن ون ملاقات بھی کی۔ شہباز شریف 23 ویں وزیر اعظم کا منصب سنبھالنے کے بعد خصوصی طیارے کے ذریعے ایک روزہ دورے پر کراچی پہنچے، شہباز شریف کے ہمراہ اراکینِ قومی اسمبلی شاہد خاقان عباسی، مریم اورنگزیب، خالد مقبول صدیقی، مولانا اسد محمود کے علاوہ مفتاح اسماعیل، اکرم درانی اور متعلقہ اعلی عہدیداران موجود تھے۔
کراچی آمد پر ان کا وزیر اعلیٰ سندھ مراد علی شاہ اور سندھ کابینہ کے ارکان نے شاندار استقبال کیا۔ بذریعہ گاڑی وزیر اعظم پاکستان مزار قائد پہنچے۔ وزیر اعلی سندھ مراد علی شاہ نے گاڑی ڈرائیو کی۔ اس موقع پر وزیر اعظم شہباز شریف نے مزار قائد پر حاضری دی، فاتحہ خوانی کی اور پھولوں کی چادر چڑھائی۔ بعد ازاں مہمانوں کی کتاب میں اپنے تاثرات بھی درج کیے جس کے بعد وزیراعظم شہباز شریف وزیراعلیٰ ہاؤس سندھ پہنچے جہاں نئے چیف سیکرٹری سہیل راجپوت نے وزیر اعظم کا استقبال کیا۔
ترجمان وزیراعلیٰ سندھ کے مطابق وزیراعلیٰ ہاؤس میں وزیراعظم شہباز شریف کی وزیراعلیٰ سندھ سے باضابطہ ملاقات ہوئی، ملاقات میں ملکی سیاسی اور معاشی صورتحال اور دیگر معاملات پر گفتگو کی گئی۔ وزیراعلیٰ نے وزیراعظم کو سندھ حکومت کے میگا پراجیکٹس سے متعلق آگاہ کیا، وزیراعلیٰ نے سابق حکومت کی سندھ کے لیے مختص رقم میں کٹوتیوں سے متعلق بھی وزیراعظم کو بتایا۔ وزیر اعظم نے یقین دہانی کرائی کہ وفاقی حکومت صوبوں کے تحفظات دور کرے گی، ان کا کہنا تھا کہ معاشی صورتحال کا جائزہ لے رہا ہوں۔
ملاقات کے بعد سندھ کے ترقیاتی پروگراموں سمیت وفاق اور سندھ کےمسائل سےمتعلق اجلاس ہوا جس کی صدارت وزیراعظم شہباز شریف نےکی۔ اجلاس میں شاہد خاقان عباسی،احسن اقبال، مفتاح اسماعیل،اکرم درانی، مریم اورنگزیب، خالد مقبول صدیقی، خواجہ اظہار، کنور نوید اور مولانا اسد محمود شریک ہوئے۔ اجلاس میں چیئرمین واپڈا،چیئرمین ریلویز، چیئرمین این ڈی ایم اے اور دیگر متعلقہ افسران بھی شریک تھے۔ وزیراعظم شہباز شریف کا کہنا تھا کہ منصب سنبھالنےکے بعد سندھ کا دورہ اور مزار قائد پر حاضری دینے پر خوش ہوں، ہمیں اس ملک کو مل کر خوشحال اور پرامن بنانا ہے۔ وزیراعظم کا کہنا تھا کہ 10 اپریل پاکستان کی تاریخ میں بڑا دن تھا، 10اپریل کو آئین کی فتح ہوئی،ایک دھاندلی کی حکومت کا اختتام ہوا، پاکستان کی ترقی تب ہوگی جب تمام صوبے ترقی کریں گے، ملک میں بیروزگاری، مہنگائی اور دیگر مسائل ہیں،ہمیں ان کو حل کرنا ہے۔ ترجمان وزیراعلیٰ سندھ کے مطابق وزیراعلیٰ نے اجلاس میں وزیراعظم کو سندھ کے مسائل سے آگاہ کیا اور توانائی منصوبوں سمیت کراچی ٹرانسفارمیشن پر وزیراعظم کو بریفنگ دی۔
ترجمان کا کہنا ہے کہ وزیراعظم کو کراچی کے3 اسپتالوں کاکنٹرول اور پانی کےمسائل سمیت ماس ٹرانزٹ، کراچی سرکلر ریلوے اور پانی کےمنصوبوں پر بھی تفصیلی بریفنگ دی گئی۔ وزیراعلیٰ سندھ نے وزیراعظم سے درخواست کی کہ کے سی آر کو سی پیک کےتحت تعمیر کیا جائے، آپ نے سی پیک کو تیز کرنے کا عہد کیا ہے، کے سی آر سمیت سندھ کے منصوبے سی پیک میں شامل کیے جائیں۔ وزیراعظم نے وزیراعلیٰ کو یقین دہانی کرائی کہ کے سی آر کو ہم واپس سی پیک کے تحت بنائیں گے۔ اس موقع پر کے فور پراجیکٹ پرچیئرمین واپڈا نے وزیراعظم کو بریفنگ دی، جس میں بتایا گیا کہ 260 ایم جی ڈی کا پراجیکٹ ہے، مالیت 126 بلین روپے ہے، یہ پراجیکٹ واپڈا تعمیر کر رہی ہے۔ وزیراعظم نے وزیراعلیٰ سندھ کی درخواست پر کےفور کےفنڈز مہیا کرنےکی ہدایت کی واپڈاچیئرمین کو کے فور منصوبہ 2024 تک مکمل کرنے کی ہدایت دی۔