غیر قانونی تعمیرات:سندھ ہائیکورٹ نے ڈسٹرکٹ سینٹرل میں تمام تعمیرات مسمار کرنے کا حکم دے دیا

news-details

کراچی: (پير: 03 جولائی 2023ء) سندھ ہائی کورٹ نے کراچی ضلع وسطیٰ میں تمام غیر قانونی تعمیرات مسمار کرنے کا حکم دے دیا۔ کراچی کی مقامی عدالت میں ڈسٹرکٹ سینٹرل غیر قانونی تعمیرات کے کیس کی سماعت ہوئی، اس دوران عدالت سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی (ایس بی سی اے) کی کارکردگی پر سوالات اٹھا دیئے۔

عدالت نے استفسار کیا کہ ایس بی سی اےغیرقانونی تعمیرات روکنے میں کیوں ناکام ہے؟ کیوں نہ اس کا ذمہ دار بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی کو ٹھہرایا جائے؟ عدالت نے تحریری حکم نامہ جاری کرتے ہوئے ڈی جی سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی کو 17 جولائی کو ذاتی حیثیت میں طلب کر لیا جب کہ آئندہ سماعت سے قبل غیر قانونی تعمیرات مسمار کرنے کا حکم بھی دے دیا۔

تحریری حکم نامے کے مطابق عدالت نے کہا ہے کہ غیر قانونی تعمیرات ختم نہ کی گئی تو حکم عدولی کے ذمہ دار ڈی جی ایس بی سی اے ہونگے۔ ایس بی سے اے کی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ غیر قانونی تعمیرات نہ روکنے کے ذمہ داروں کا تعین کرنے کے لئے کمیٹی تشکیل دے دی گئی۔ عدالت نے حکم دیا ہے کہ آئندہ سماعت سے قبل اگر ذمہ داروں کا تعین نہ ہوا تو تمام اراکین کمیٹی عدالت میں خود پیش ہوں۔

عدالت نے ڈی جی کی رپورٹ کو بھی غیر تسلی بخش قرار دیتے ہوئے کہا کہ رپورٹ میں نہیں بتایا گیا کہ غیر قانونی تعمیرات کب تک مسمار کی جائیں گی۔ ان کے گیس، بجلی اور پانی کے کنکشنز کیوں نہیں ختم کئے گئے۔ ایس بی سی اے کے لئے مخصوص تھانے کے باوجود دیگر فورس کی کیوں ضرورت ہے؟ یہ تمام وضاحتیں رپورٹ کا حصہ ہونی چاہئیں۔ آئندہ سماعت سے قبل غیر قانونی تعمیرات مسمار کی جائیں۔