پروفیسر ڈاکٹر بیکا رام کی جانب سے ذیابیطس کے عالمی دن کے حوالے سے سیمینار منعقد

news-details

حیدرآباد: (اتوار: 19 نومبر2023ء)  پاکستان سوسائٹی آف انٹرنل میڈیسن سندھ چیپٹر کے وائس پریزیڈنٹ پروفیسر ڈاکٹر بیکا رام کی جانب سے ذیابیطس کے عالمی دن کے حوالے سے سیمینار منعقد کیا گیا ۔ سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے سابق وائس چانسلر لمس پروفیسر ڈاکٹر بیکا رام نے کہا کہ پاکستان میں شوگر کے مریضوں کی بڑھتی شرح کے باعث دنیامیں پہلے نمبر پر آگیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ فوری طور پر ایسے اقدامات کی ضرورت ہے جس سے بڑھتے ہوئے مریضوں کی تعداد کم ہو سکے کیونکہ ہمارے ملک میں رہنے والے لوگوں کی غذائی عادات اور طرزِ زندگی کو صحت مندانہ قرار نہیں دیا جا سکتا۔

انہوں نے کہ پاکستان میں بالغ افراد میں ذیابیطس کی شرح 26.7 فیصد سے زائد ہے جبکہ نوجوانوں میں اتنے ہی لوگوں کے اس مرض میں مبتلا ہونےکے خطرات موجود ہیں کیونکہ گزشتہ برسوں میں ہمارے یہاں موٹاپا تیزی سے بڑھا ہے، غذا میں چکنائی کے زیادہ استعمال، ورزش نہ کرنے اور معاشی دباؤ نے اس مرض کو بڑھا دیا ہے۔ اس مرض سے نجات کے لیے ماہرین نے بتایا کہ ہمیں اپنا طرزِ زندگی بدلنے، فاسٹ فوڈ چھوڑ کر سادہ غذاؤں کا استعمال کرنے اور ورزش کو معمول بنانے کی ضرورت ہے۔

سیکریٹری جنرل پاکستان سوسائٹی آف انٹرنل میڈیسن ڈاکٹر صومیا اقتیدار نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اگر کہ ذیابیطس سے بچاؤ بہت آسان ہے ورزش اور صحت مند خوراک آپ کی زندگی کو آسان کر دیتی ہے ۔ سینیر وائس پریزیڈنٹ پاکستان سوسائٹی آف انٹرنل میڈیسن پروفیسر ڈاکٹر آفتاب محسن نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اس وقت دینا میں ذیابیطس کے مریض بہت تیزی سے بڑ رہے ہیں خاص طور پر نوجوان ،ہم کو نوجوان نسل کو اس مرض سے بچانا ہے ،ذیابیطس کے مریض مہینے میں ایک دفعہ ضرور اپنا چیک آپ کرایے ،اور بلا ناغہ دوا کھایا کریں ۔ اس موقع پر پروفیسر نور محمد میمن،پروفیسر اقبال میمن،پروفیسر عمران شیخ،پروفیسر نثار کھوکھر،ڈاکٹر سنتوش کمار اور دیگر نے شرکت کی.